گُلستانِ سعدی شیرازی کی ایک حکایت کا اُزبکی ترجمہ

کۉردیم کی، بیر بدَوی (صحرایی عرب) اۉغلی‌گه شونده‌ی دېردی: «ای اۉغلیم، قیامت کونی سېن‌دن: «آتنگ کیم؟» دېب اېمس، «قنده‌ی هُنرینگ بار؟» دېب سۉره‌یدی‌لر».

کعبه یاپقیچی‌نی اۉپیشر اېکن،
ایپک قورت طُفَیلی بۉلمه‌دی اولوغ.
بیر نېچه کون بۉلدی عزیز اېگنی‌ده،
شونینگ بیلن بۉلدی اۉزی هم قوتلوغ.

مترجمِ نثر: رُستم کامِلوف
مترجمانِ نظم: غفور غُلام، شاه‌اسلام شاه‌مُحمدّوف

ترجمہ:
میں نے دیکھا کہ ایک بدَوی (صحرائی عرب) اپنے پِسر سے یہ کہہ رہا تھا: «اے میرے پِسر، بہ روزِ قیامت تم سے «تمہارا پدر کون ہے؟» نہیں، بلکہ «تم کس طرح کا ہُنر رکھتے ہو؟» سوال کیا جائے گا۔»

کعبہ کے غِلاف کو جو مردُم بوسہ دیتے ہیں
وہ کِرمِ ریشم کے طُفیل عالی و عظیم نہیں ہوا
[بلکہ] وہ کئی روز تک [ایک] عزیز [چیز] کے شانے پر رہا
اِس طرح سے وہ خود بھی مُبارک ہو گیا

(یعنی غلافِ کعبہ کی عظمت اُس کے ریشمی ہونے کے باعث نہیں ہے، بلکہ کعبے سے نِسبت رکھنے کے باعث ہے۔)

لاطینی رسم الخط میں:
Ko’rdimki, bir badaviy (sahroyi arab) o’g’liga shunday derdi: "Ey o’g’lim, qiyomat kuni sendan: "Otang kim?” deb emas, "Qanday hunaring bor?” deb so’raydilar”.

Ka’ba yopqichini o’pishar ekan,
Ipak qurt tufayli bo’lmadi ulug’.
Bir necha kun bo’ldi aziz egnida,
Shuning bilan bo’ldi o’zi ham qutlug’.

× ترجمے میں قِطعہ گیارہ ہِجوں کے ہِجائی وزن میں ہے۔

Advertisements